گلگت بلتستان میں شہتوت، برانج، اوسے موسم گرما کا پہلا پھل

10155516_763350390371294_5862257766589569219_nجون 22 پھسو ٹائمز:  شہتوت، موسم گرما کا پہلا پھل
گلگت بلتستان میں موسم گرما کے پھلوں کی ابتداء شہتوت سے ھوتی ھے مئی کے اواخر سے لیکر جولائی کی ابتدائی دس ایام تک گلگت بلتستان میں شہتوت کا موسم ھوتا ھے۔ گلگت بلتستان میں اسکی پانچ سے زیادہ قسمیں پائی جاتی ہیں جو رنگ و شکل میں مختلف ہیں اور لزت میں سب سے آگے “بے دانہ” کا نام آتا ھے،اگر اسکو شہتوت کا سردار کہا جائے تو بیجا نہ ھوگا، اسکا رس ٹپکتا رہتا ہے۔ یہ پھل مقامی زبان بلتی میں اوسے، وخی میں برنج اردو میں “شہتوت”،عربی میں “توت” انگلش میں”mulberry” کے نام سے معروف ھے۔
قدیم زمانے سے لیکر آج تک یہ پھل اپنی مٹھاس اور لزت میں اہنی مثال آپ ھے،اور بچے بوڑھے جوان سبھی لوگ بے چینی سے اس موسم کا انتظار کرتے ہیں،اگرچہ ماضی قریب میں مثبت تبدیلی دیکھنے میں آئی ھے لیکن پھر بھی وسائل کی کمی اور شعور اجاگر نہ ھونے کیوجہ سے درختوں کے نیچے پڑے پڑے یہ پھل آنکھوں کے سامنے ھر جگہ ضائع ھوتا نظر آتا ھے۔

موسم سرما میں بھی اسکی افادیت کم نھیں ھوتی،بلکہ اس سلسلے میں عورتیں اسکو 10322809_501114583349032_2087295870353200567_nخشک کرنے میں بڑھ چڑھ کے حصہ لیتی ہیں ،اور حالات، مہنگائی بڑھنے کیساتھ کیساتھ علاقے میں لوگوں کا رجحان ڈرائی فروٹ کی طرف بڑھنے لگا ھے اور یہ ایک قابل تعریف تبدیلی ھے جسکی وجہ سے آج کل ان پھلوں کا ضیاع روکنا ممکن دکھائی دیتا ھے، صاف شہتوت سکردو شہر،گردو نواح کے بازاروں میں ڈرائی فروٹ کے طور پر فی کیلو 100 روپے سے بھی کم قیمت پر دستیاب ھے،یہ سوغات خاص طور پر سمندر پار جانے والے لوگ دوستوں رشتہ داروں کے لئے گفٹ کے طور پر خریدتے ہیں۔   شہتوت کے فوائد:
عموما میٹھے شہتوت کھانے سے طبیعت میں سکون آتا ہے۔یہ پھل بے چینی ،گھبراہٹ،چڑچڑاپن اور غصہ دور کرنے کیساتھ صالح خون پیدا کرتا ہے،اسکے کھانے سے جگر اور تلی کی اصلاح ہوتی ہی ھے ساتھ زود ہضم غذائیت سے مالا مال ہوتا ہے،اس پھل میں مصفا پانی،گوشت بنانے والے اجزاء،نشاستےدار شکر شامل ہے۔اسکے کیمیائی اجزاء میں تانبا،
آئیوڈین،پوٹاشیم ،کیلشیم،فولاد،فاسفورس اور روغنیات شامل ہیں۔

قدرت نے اس پھل کو وٹامن اے ، بی اور ڈی سے بھی کثیر مقدار میں نوازہ ہے،یہ قبض کشائی کیساتھ ہاضمے کو تقویت دیتی ہے،جگر کو افادیت پہنچا کر صالح خون کو پیدا کرنے میں یہ اکسیر و مجرب ہے۔

گرمی کی پیاس کی شدت اور ہیجانی کیفیت دور کرنے کیساتھ اسکا شربت بخار میں فائدہ مند اور جسم کی حرارت کو کم کرتا ہے،اسکے استعمال سے بلغمی مادہ خارج ہو جاتا ہے،یہ شدید کھانسی ،خاص طور پر خشک کھانسی میں اور گلے کی دکھن میں بے حد مفید ہے،سر درد کے لیے اکیس تازہ شہتوت لیکر چینی کی پلیٹ میں لیکر رات بھر کھلے آسمان کے نیچے رکھیں اور صبح نہار منہ کھانے سے پہلے ہی دن آرام آ جاتا ہے۔

معدہ و جگر میں جب گرمی بڑھ جاتی ہے تو اسکے اثرات عموما زبان پر چھالوں کی صورت میں پڑتے ہیں، اسکے علاوہ گلے میں درد بھی شروع ہو جاتا ہے،متاثرہ فرد کھانے سے بھی عاجز ہو جاتا ہے ایسے میں اگر شہتوت کے درخت سے نرم نرم کونپلیں توڑ کر اچھی طرح چبائی جائیں تو منہ کے چھالے دور ہو جاتے ہیں۔
کسی چیز کے اضافے یا کمی سے الرجی ہو جاتی ہے، جسے عرف عام میں پتی بھی کہا جاتاہے،جب یہ الرجی ہوتی ہے تو جسم پر سرخ رنگ کے چکتتے پڑ جاتے ہیں،اس سے جسم پر خارش ھونے کیساتھ بہت تکلیف رہتی ہے،ایسے میں کچے شہتوت لیں انہیں پیس کر جو کے سرکے میں ملائیں اس میں تھوڑا سا عرق گالاب بھی شامل کرکے انہیں اس قدر باہم ملائیں یہاں تک کہ یکجان ہو جائیں،اس دوا کو متاثرہ جگہ پر لیپ کرنے کے بیس منٹ بعد نہا لیں تو پتی کا خاتمہ ہو جائے گا۔

جو لوگ شہتوت شوق سے کھاتے ہیں انکے گلے کبھی خراب نہیں ہوتے ہیں اور نہ Mulberry-Blackانہیں ٹانسلز کی تکلیف ہوتی ہے،اسلیے شہتوت کے مو سم میں ضرور شہتوت کھائیں۔
نزلہ و زکام اور دماغی تکلیف کے لیے مریض صبح سویرے شہتوت سیاہ نہار منہ کھائیں، چند دن کے استعمال سے دماغی خشکی اور نزلہ زکام سے نجات مل جائے گی۔

ریشم کے حصول کیلئے شہتوت کی باقاعدہ کاشت کا سلسلہ گزشتہ چار ہزار برس سے جاری ہے اور کاشت کرنے والے ممالک اور اس کے زیرکاشت رقبے میں روز افزوں اضافہ ہو رہا ہے لیکن گلگت بلتستان میں وسائل کی کمی اور شعور نہ ھونے کی وجہ سے شہتوت کے پتے مال مویشیوں کی خوراک کا حصہ بن جاتا ھے۔۔!

یہاں ایک اھم بات بھی زہن نشین کرلیں، اللہ تعالی کی نعمتیں کھاکر اس زات کا شکر بجا لانا بھی از حد ضروری ھے تاکہ یہ نعمتیں ھم سے چھن نہ جائیں،ارشاد باری تعالی ھے( لئن شكرتم لأزيدنكم ولئن كفرتم إن عذابي لشديد) سورة إبراهيم
شکر گزار بنوگے تو مزید نعمتوں کا حق دار ٹھیروگے،ناشکری کا ارتکاب کروگے تو سب کچھ چھن سکتاھے۔۔۔۔….

 

 

اصل اشاعت جامعہ دارلعلوم بلستان چند تدوین پھسو ٹائمز نے علاقے کی مناسبت سے کی ہے۔۔

تصاویر گوگل ویب

Advertisements

One response to “گلگت بلتستان میں شہتوت، برانج، اوسے موسم گرما کا پہلا پھل

  1. برائے کرم یہ طریقہ بھی ضرور بتایں کہ شہتوت کو خشک کیسے کیا جاتا ہے ۔ شکریہ

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s