چٹورکھنڈ: نالے کے حدود کا تنازعہ، نامعلوم شخص کی سنگباری سے لکڑیوں کے لئے جانے والا محنت کش جاں بحق، چار مشتبہ افراد گرفتار |PASSUTIMESاُردُو

011چٹورکھنڈ، غذر : اتوار، 25 اکتوبر، 2015ء – پھسو ٹائمز اُردُو (نعیم انور) فمانی نالہ میں قتل واقعہ کے الزام میں چٹورکھنڈ پولیس نے چراگاہ سے چار مشتبہ افراد کو گرفتار کرکے چٹورکھنڈ پولیس سٹیشن پہنچا دیا۔ پولیس زرائع کے مطا بق گرفتار ملزمان سے قتل کے حوالے سے اہم انکشافات متوقع ہیں۔یاد رہے کہ دو روز قبل فمانی ،ہاسس متنازعہ نالہ میں نامعلوم افراد کی سنگباری سے لکڑیوں کیلئے جانے والا شخص ہلاک ہو گیا تھا،جس پر عوام ہاسس نے واقعہ میں ملوث ملزمان کی گرفتاری کیلئے انتظا میہ کو چوبیس گھنٹہ کا ڈیڈ لا ئین دے رکھا تھا جس پر چٹورکھنڈ پولیس نے کا روائی کرتے ہو ئے فمانی گاوں سے تعلق رکھنے والے چار مشتبہ افراد کو گرفتار کر کے انکے کیخلاف کا روائی شر وع کردی ہے۔پو لیس زرائع کیمطابق گرفتار ملزمان سے قتل کے حوالے سے اہم انکشافات متوقع ہیں۔

چٹورکھنڈ(نعیم انور) ؔ نالے کے حدود کا تنازعہ، نامعلوم شخص کی سنگباری سے لکڑیوں کے لئے جانے والا محنت کش جاں بحق،اہا لیان ہاسس کا واقعے کے خلاف دھرنا،اشکومن روڈ بلاک ،نعش وصول کرنے سے انکار،ممبر قانون ساز اسمبلی نواز ناجی اور سابق امیدوار ظفر شادم خیل نے مذاکرات کے بعد ملزم کی گرفتاری کے لئے ایس ایچ او کو 24گھنٹے کی مہلت،عدم گرفتاری کی صورت میں احتجاج کی دھمکی،تھانہ چٹورکھنڈ نے نامعلوم ملزم کے خلاف 302کا پرچہ درج کرکے تلاش شروع کردی۔تفصیلات کے مطابق گاؤں ہاسس اور فمانی کے مابین نالے کی حدبندی کے تنازعے نے ایک محنت کش کی جان لے لی ۔گاؤں ہاسس کا رہائشی غریب محنت کش موسیٰ خان ولد میرباز جلانے کی لکڑی لانے نالہ گیا اس دوران پہاڑی پر موجود نامعلوم شخص نے متوفی اور اس کے ساتھی کولکڑی لے جانے کی صورت میں سنگین نتائج کی دھمکیاں دیں اور اسی دوران مبینہ طوپرر اونچائی سے سنگباری شروع کردی ،پتھر سر کے پچھلے حصے میں لگنے سے موسیٰ خان ساکنہ ہاسس موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے جبکہ دوسرے ساتھی نے بھاگ کر جان بچائی۔ذرائع کے مطا بق اہالیان ہاسس اور فمانی کے مابین گزشتہ کافی عرصے سے نالے کی حد بندی کا تنازعہ چلا آرہا ہے۔متوفی کی نعش پوسٹمارٹم کی غرض سے رات 8بجے سول ہسپتال چٹورکھنڈ لایا گیا لیکن ڈاکٹر کی عدم موجودگی کے باعث نعش 15گھنٹوں تک ہسپتال میں پڑی رہی بعدازاں لاش کی پوسٹمارٹم کے بعد نعش ورثاء کے حوالے کی گئی تو لواحقین نے ملزم کی گرفتاری تک نعش لینے سے انکار کردیا ،اس دوران عوام ہاسس نے ہاسس کے مقام پر واقعے کے خلاف دھرنا دیا اور گلگت اشکومن روڈ بلاک کردی۔اس موقع پر ممبر قانون سازاسمبلی نواز خان ناجی اور سابق امیدوار ظفر محمد شادم خیل موقع پر پہنچے اور مظاہرین سے مذاکرات کے بعد ایس ایچ او تھانہ چٹورکھنڈ کو ملزم کی گرفتاری کے لئے 24گھنٹے کا الٹی میٹم دیا ،ملزم کی عدم گرفتاری کی صورت میں ڈیڈ لائن گزرجانے کے بعد دوبارہ احتجاج کی دھمکی دی گئی ہے،ادھر پولیس تھانہ چٹورکھنڈ نے ملزم کے خلاف 302ت پ کے تحت مقدمہ درج کر کے ملزم کی تلاش شروع کردی ہے۔

Advertisements

One response to “چٹورکھنڈ: نالے کے حدود کا تنازعہ، نامعلوم شخص کی سنگباری سے لکڑیوں کے لئے جانے والا محنت کش جاں بحق، چار مشتبہ افراد گرفتار |PASSUTIMESاُردُو

  1. This is quite wrong to say before actual facts come before the law that the cause of murder is the issue of Famani/Hasis nala rather it may be an accident without any preplanned .The accused who has been arrested is minor and shephard.God forbade if he is proved to be real convict then it is clear that was his personal wrongful act.it should not be manipulated conflicts between neighbor villages.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s