اسلام آباد: گلگت بلتستان اورخیبر پختونخواہ حکومت شاہراہ قراقرم پر کے پی کے پولیس کا مسافروں کے ساتھ نارواں سلوک کا نوٹس لیں|PASSUTIMESاُردُو

12046822_1067797503231539_7862263001847933931_nاسلام آباد: جمعرات، 29 اکتوبر، 2015ء پھسو ٹائمز اُردُو (نمائندہ خصوصی) خیبر پختونخواہ پولیس نے حالیہ زلزلے میں کوہستان کے علاقے میں لینڈسلائیڈنگ کے باعث پھنس جانے والے مسافرروں کو جگہ جگہ پولیس نے سیکیورٹی کے نام پر تنگ کرنے کا ایک نہ ختم ہونے والا سلسلہ شروع کر رکھا ہے، جس سے شاہراہ قراقرم گلگت تا راولپنڈی جانے والے مسافر عاجز آچکے ہیں، اپنی مرضی کے اسٹاپ لگا کر مسافروں کو یرغمال بنائے رکھنا اب روز کا معمول بن چکا ہے جس کی وجہ سے مسافروں کی سفری مشکلات میں آئے روزاضافہ ہوتا جارہے اس حوالے سے مسافروں کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخواہ پولیس مسافروں کے ساتھ سیکوریٹی کے نام پر نارواں سلوک بند کریں اور صوبائی حکومت گلگت بلتستان اور خیبر پختونخواہ حکومت کے پی کے پولیس کی مسافروں کے ساتھ نارواں سلوک کا سختی سے نوٹس لیں اور اس کے تدراک کیلئے جلد اقدامات اٹھائیں مسافروں نے مزید کہا کہ ہم بمشکل زلزلے سے جان بچا کر داسو پہنچ جہاں پولیس اہکاروں نے ہمیں کھانہ کھانے سے زبردستی روکا معاملہ دریافت کرنے پر معلوم ہو کہ ہوٹل مالکان نے پولیس کو کمیشن دینا بند کر دیا جس کے برعکس پولیس ٹرانسپورٹرز کو دھمکاکے مسافر گاڈیوں کوان علاقوں میں سٹاپ لگانے پر مجبور کیا جاتا ہے جہاں پولیس کا راج اور ناقص صفائی اور غیر معیاری کھانہ دستیاب ہوتے ہیں جس کے باعث دوران سفر مسافروں کی طبعیت خراب ہوتی ہے واضح رہے کہ اس سے قبل بھی کئی بار کے پی کے پولیس نے مسافروں اور سیاحوں پر تشدد کے واقعات رونما ہوچکے ہیں۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s