گلگت: ڈسٹرکٹ پولیس گلگت میں اہم جگہوں پر ڈیوٹی سر انجا م دینے والوں میں اکثریت غیر تر بیت یا فتہ ہیں جو کہ سفا رش کی بدولت وردی پہن کر اسلحے کے سا تھ ڈیو ٹی دے رہے ہیں|PASSUTIMESاُردُو

11895979_782790045172112_8507196678401972622_nگلگت: جمعرات، 29 اکتوبر، 2015ء – پھسو ٹائمز اُردُو (نمائندہ خصوصی) زرائع سے معلوم ہو ا ہے کہ ڈسٹرکٹ پولیس گلگت میں اہم جگہوں پر ڈیوٹی سر انجا م دینے والوں میں اکثریت غیر تر بیت یا فتہ ہیں جو کہ سفا رش کی بدولت وردی پہن کر اسلحے کے سا تھ ڈیو ٹی دے رہے ہیں ۔ وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان کے سکاؤاڈ میں بھی اس قسم کے پولیس اہلکار شا مل ہیں سا تھ ہی گلگت میں ایگل اور چو کیوں میں ڈیو ٹی دینے والے ہیں ۔ قانون کے مطا بق ان کا وردی پہننا اور اسلح لیکر ڈیوٹی دینا غیر قا نو نی ہے جب تک کو ئی بھی پولیس اہلکار اپنی ٹریننگ مکمل نہیں کر تا تب تک اس کو پر موٹ کر کے ڈیو ٹی پر معمور نہیں کیا جا سکتا ہے ۔ بغیر ٹریننگ کے اہلکاروں کو ترقی بھی دی گئی ہے اس طر ح کے اس اقدام سے تو یہ ثا بت ہو رہا ہے کہ پولیس محکمے میں چیک اینڈ بیلنس نہیں ہے اور سفارش کلچر عام ہے اور میر ٹ کا قتل عام ہے ایک حقدار کو اس کا حق نہیں مل رہا ہے اور سفارش والوں کو بغیر ٹریننگ کے ڈیو ٹی پر معمور کر نا قانون کے سا تھ خو د قا نون شکنی ہے ۔ اس قبل بھی اس قسم کے واقعات پر سا بقہ آئی ،جی ۔پی نے نو ٹس لیتے ہو ئے پولیس ٹریننگ سکول میں تمام ان افراد کو حا ضر کیا تھا اور ان سے تریننگ کروایا تھا ۔ میرٹ کی بحالی اور قانون کی با لا دستی کے لیئے پولیس محکمے میں ان معا ملات پر کام کر نے کی اشد ضرورت ہے تا کہ عوام کے جان و مال کی حفا ظت کے سا تھ وہ پولیس اہلکا ر اپنی خود کی بھی حفا ظت کر سکے

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s