گلگت: حکومت مقامی کاشت کاروں سے4ہزار سے زائد رقم پر گندم کی بوری خریدے گی تاکہ کاشت کاروں کو فائدہ پہنچایا جاسکے، حفیظ |PASSUTIMESاُردُو

eگلگت: اتوار، یکم نومبر، 2015ء – پھسو ٹائمزاُردُو(نمائندہ خصوصی) وزیر اعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے صوبائی سیکریٹری زراعت اور دیگر آفیسران کو ہدایت کی ہے کہ گلگت بلتستان کے کاشت کاروں کو سہولیات فراہم کرنے کیلئے بھر پور اقدمات کیے جائیں۔ مقامی کاشت کاروں کی منڈی تک براہ راست رسائی ممکن بنایا جائے تاکہ زیادہ سے زیادہ فائدہ کاشت کاروں کو مل سکے۔ گلگت بلتستان میں زرعی شعبے کے حوالے سے وسیع مواقع موجود ہیں صوبائی حکومت زرعی شعبے کے فروغ کیلئے ادارے میں اصلاحات متعارف کرانے کا فیصلہ کیا جاسکے ٹیکنیکل سپورٹ پنجاب حکومت سے لی جائیگی۔ وزیرا علیٰ نے کہا کہ شہری علاقوں میں کچن گارڈننگ کو فروغ دینے کیلئے پایلئٹ پراجیکٹس کا آغاز کیا جائے۔ وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ یونائٹیڈ نیشن انڈسٹریل ڈویلپمنٹ آرگنائزیشن(UNIDO) کے ساتھ ہونے والے حالیہ اجلاس میں گلگت بلتستان سے آرگین نیک فوڈ کی بیرونی برآمدات میں صوبائی حکومت کو بھر پور تعاون فراہم کریگا۔ جس سے صوبے کے کاشت کاروں کی معیشت بہتر بنائی جاسکے گی۔ وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ اس سال آلو کی کاشت سے مقامی کاشتکاروں کو نقصان کاسامنا کرنا پڑا اسلئے کاشت کاروں کو زیادہ سے زیادہ گندم کاشت کی ترغیب کیلئے اقدامات کیے جائیں حکومت مقامی کاشت کاروں سے4ہزار سے زائد رقم پر گندم کی بوری خریدے گی تاکہ کاشت کاروں کو فائدہ پہنچایا جاسکے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان نے کاشت کاروں کیلئے خصوصی پیکیج کا اعلان کیا ہے جس گلگت بلتستان کے کاشت کار بھی مستفید ہونگے۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ محکمہ زراعت گلگت بلتستان میں آبی نظام کی بہتری کیلئے واٹر چیلنجز کی بحالی اور تعمیر کیلئے اقدامات کرے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے محکمہ زراعت کی جانب سے ادارے کے بارے میں دیے جانے والے بریفنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ گلگت بلتستان میں مرغبانی، دودھ، اور انڈوں کی پیداوار کی گلگت بلتستان میں اضافہ کیلئے عملی اقدامات کیے جائیں اور آئندہ سال عید قربان کیلئے محکمہ زراعت کی جانب سے مویشی منڈی متعارف کرایا جائے۔ وزیراعلیٰ نے محکمہ حیوانات کو ہدایت کی ہے کہ مال مویشیوں ، پھلوں اور سبزیوں کو بیماریوں سے بچانے کیلئے باقاعدہ آگاہی مہم چلائی جائے۔ وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حافظ حفیظ الرحمن نے سیکریٹری زراعت کو ہدایت کی ہے کہ ملازمین کی حاضری یقینی بنانے کیلئے محکمہ میں بائیو میٹرک حاضری کا نظام متعارف کرایا جائے متعلقہ وزیراور سیکریٹری وٹینری ہسپتالوں میں ہنگامی دورے کریں تاکہ ملازمین کی حاضری اور عوامی شکایات کو دور کیا جاسکے گلگت بلتستان کے کاشت کاروں کو ملاوٹ سے پاک یوریا کھاد کی فراہمی کیلئے دیگر صوبوں کی طرح گلگت بلتستان میں بھی بلک ڈپو قائم کیا جائیگا جس کیلئے جلد وفاقی حکومت سے رابطہ کرئینگے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s