گلگت: پروفیسر ڈاکٹر شاہنواز پر پر تشدد حملے کے واقعہ کے خلاف مختلف طلباء تنظیموں نے ہفتے کے روز گلگت پریس کلب کے باہر پرامن احتجاجی مظاہر ہ|PASSUTIMESاُردُو

dbfaad45-1794-4338-a163-cc9e3871b3f4گلگت: اتوار، 15 نومبر،2015ء پھسو ٹائمز اُردُو (نعیم انور) قراقرم انٹر نیشنل یونیورسٹی میں پروفیسر ڈاکٹر شاہنواز پر پر تشدد حملے کے واقعہ کے خلاف مختلف طلباء تنظیموں نے ہفتے کے روز گلگت پریس کلب کے باہر پرامن احتجاجی مظاہر ہ کیا ،احتجاجی مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے طلباء رہنما وں کا کہنا تھا کہ شر پسندوں کی طر ف سے پروفیسر شاہنواز پر حملہ کرنا گلگت شہر کا امن خراب کرنے کی سازش ہے اور یہ وا قعہ صرف ایک پر وفیسر پر حملہ نہیں بلکہ گلگت بلتستان کے امن پر حملہ ہے،جب بھی گلگت بلتستان کو آئینی حقوق ملنے کے امکانات روشن ہوتے ہیں تو چند شر پسند عناصر لوگوں کو آپس میں لڑا کر خطے کو حقوق سے محروم رکھنے کیلئے اس قسم کے شرپسندانہ کا روائیاں کرتے ہیں تاکہ یہاں کے حقوق سے محروم لوگ مسلکی بنیادوں پر آپس میں لڑتے رہے اور مشترکہ مفادات پر متفق نہ ہوں ۔مقررین کا کہنا تھا کہ یونیورسٹی واقعہ کسی بھی طرح مسلکی بنیادوں پر نہیں بلکہ چند شرپسندوں کی ایک سازش ہے جو قراقرم یونیورسٹی کو مذہبی اور مسلکی بنیادوں پر تقسیم کر کے یونیورسٹی کو بند کرانا چاہتے ہیں اور علاقے کے امن کو سبوتاژ کرنے کی ایک سازش ہے۔ڈاکٹر شا ہنواز پر حملہ صرف ایک ٹیچر پر نہیں بلکہ استاد جیسے مقدس پیشے پر حملہ ہے جو کسی بھی طرح قابل برداشت نہیں حکومت اور انتظا میہ واقعہ میں ملوث ملزمان کو فوری طور پر گرفتار کر کے انکے خلاف نیشنل ایکشن پلان کے تحت کا روائی عمل میں لائے اور یونیورسٹی میں مستقل امن قائم رکھنے کیلئے یونیورسٹی میں رینجرز تعینات کیے جائے ،یونیورسٹی کے برائے نام سیکورٹی کو متحرک کیا جائے،اس قسم کے ناخوشگور واقعات کو روکنے کیلئے یونیورسٹی ہذا میں لگا ئے گئے سی سی ٹی وی کیمروں کو ٹھیک کیا جائے اور انکی تعداد میں اضافہ بھی کیا جائے تاکہ ملزمان کی نشاندہی میں آسانی ہو سکے ۔یونیورسٹی کو فرقہ واریت کی طرف دھکیلنے کی سازش کرنے والے پس پردہ عناصر کا کھوج لگایا جائے اور انکے خلاف اے ٹی اے کے تحت کاروائی کی جائے۔یونیورسٹی سمیت گلگت شہر کے تمام کالجوں اور دیگر تعلیمی اداروں میں فول پروف سیکورٹی کا انتظام کیا جائے اور قانون نافذ کرنے والے ادارے تعلیمی اداروں کو لڑائی جھگڑے کا مرکز بنا نے والے شر پسند اور فرقہ وارانہ سوچ کے حامل عناصرپر کڑی نظر رکھیں اور شہر کا امن تباہ کرنے والے عناصر کے ساتھ کوئی رعایت نہ بخشی جائے ۔انہوں نے کہا کہ تعلیمی اداروں میں فساد بر پا کرنے والے شرپسندوں کا کسی مسجد یا مسلک سے کو ئی تعلق نہیں بلکہ اُنکا مقصد علاقے کا امن تباہ کرنا ہے ایسے عناصر علاقے کا مشترکہ دشمن ہیں انتظامیہ ایسے لوگوں کیخلاف بلا امتیاز قانونی کا روائی کریں تاکہ گلگت بلتستان کے شہری سکھ کا سانس لیں سکے،احتجاجی مظاہرین سے پی ایس ایف گلگت کے صدر شہزاد حسین الہامی،ایم ایس ایف کے صوبائی ترجمان اسلم پرویز،اسلامی جمعیت طلباء کے عدنان،ہنزہ سٹوڈنس کے صدر ،بونجی طلباء کے صدر و دیگر طلباء تنظیموں کے رہنماوں نے خطاب کیا۔احتجای مظاہرین نے واقعہ کے خلاف مذامتی الفاظ درج کر کے پلے کارڈزاور بینرز اُٹھا ررکھے تھے ،احتجاج کے باعث کئی گھنٹے تک ریور ویو روڈ ٹریفک کیلئے بند رہااور سیکورٹی کے پیش نظر پولیس کی بھاری تعداد بھی موقع پر موجود تھی ۔احتجاج مظاہرین نے وقعہ میں زخمی ہونے والے پروفیسر ڈاکٹر شاہنواز کی جلد صحتیابی کیلئے دعا بھی کی اور پرامن طورپر منتشر ہو گئے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s