گلگت بلتستان میں نظام تعلیم اور معیار تعلیم متا ثر ہو نے لگا ہے ہر گلی کو چے میں پرائیوٹ سکولوں کی بھر مار |PASSUTIMESاُردُو

downloadگلگت : جمعہ، 20 نومبر2015ء پھسو ٹائمز اُردُو ( نما ئندہ خصوصی) حکومت کی جا نب سے بہترین پا لیسی سا منے نہیں آنے پر گلگ اور ان پرا ئیوٹ سکولوں نے تعلیم کے بجا ئے رقم بٹور نے کا کا روبار شروع کر دیا ہے ۔ اس وقت kiuسے ماسٹر کے 3000ہزار طلبا ء فا رغ ہو کر بے روز گار پھر رہے ہیں اور کم قیمت پر کسی بھی پرائیوٹ سکول میں پڑ ھا نے لگتے ہیں اور زیادہ تر سکولوں میں کو ئی چیک اینڈ بیلنس نہیں ہے اور طلباء و طالبات کی زہنی نشو نما بھی متا ثر ہو رہی ہے ۔ ابھی تک حکومتی دعوے کسی بھی کام کے ثا بت نہیں ہو سکے پچھلی حکومت نے پرا ئیوٹ سکولوں کے لیئے پا لیسی بنا ئی تھی لیکن اس پہ بھی عملدر آمد نہیں ہو سکا ۔ رہی سہی کسر سرکاری سکولوں کے اسا تذہ نے نکال دیا ہے خود بھا ری رقم لیکر سر کاری سکولوں میں پڑ ھا تے ہیں اور اپنے بچوں کو پرائیوٹ سکو لوں میں دا خل کر ادیا ہے اور سر کاری سکولوں میں پڑ ھا نے والے اساتذہ اپنی ہی کا رکر دگی سے مطمئن نہیں ہیں جس کے بدولت نظام تعلیم اور معیار تعلیم بر ی طر ح متا ثر ہو رہا ہے ۔ حکو مت کو نظام تعلیم اور معیار تعلیم کو بہتر بنا نے کے لیئے ہنگا می بنیا دوں پر کام کر نے کی اشد ضرورت ہے سا تھ ہی شرا ئط لا گو کیئے جا ئیں کہ سرکا ری سکولوں کے اسا تذہ کے بچے بھی میٹرک تک تعلیم سرکا ری سکول سے حا صل کر یں تو سر کاری سکولوں کا نظام بھی درست ہو سکتا ہے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s