گلگت: شہر میں آٹابحران شدت اختیار کرگیا ،لوگ ناشتے کے وقت تندوروں کا رخ کرنے لگے جبکہ غریب اور سفید پوشوں کے گھروں میں فاقوں کی بوبت آگئی|PASSUTIMESاُردُو

گلگت: اتوار، 06 دسمبر، 2015ء – پھسو ٹائمز اُردُو (نمائندہ خصوصی) گلگت شہر 10398059_472192282914011_3736075169115389187_nمیں آٹابحران شدت اختیار کرگیا ،لوگ ناشتے کے وقت تندوروں کا رخ کرنے لگے جبکہ غریب اور سفید پوشوں کے گھروں میں فاقوں کی بوبت آگئی ،ناقص پالیسی کی وجہ سے گلگت شہر اور مضافات میں آٹا سیل پوائنٹس خالی ہونے لگے ،یاد گار محلہ کے گنجان آباد علاقے کے تین آٹا ڈیلروں کو ختم کرکے صرف ایک سیل پوائنٹ قائم کرکے کوٹے میں کمی کرنے کی وجہ سے سیل پوائنٹ پر لڑائی جھگڑے روز کے معمول بن گئے شہریوں نے اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لیکر گلگت شہر اور بالخصوص یادگار محلے کیلئے آٹے کوٹے میں اضافہ اور مصنوعی بحران کا خاتمہ کرنے کی اپیل کی ہے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے شہریوں یاسرعرفات،جمیل احمد،عبداللہ ،زاکر خان ،محمد حبیب ،اکرم علی اور دیگر نے کہا کہ شہر میں آٹا کے بحران کی وجہ سے دربدر کی ٹھوکریں کھارہے ہیں آٹا کے معیار کو بھی کم کیا گیا ہے سابقہ آٹا ڈیلروں کو ختم کرکے محکمہ خوراک نے اپنی نگرانی میں آٹا سیل پوائنٹس قائم کئے اس کے باوجود عوام کو آسانی سے آٹا میسر نہیں ہے گزشتہ مہینے سے آٹا بحران شدت اختیار کرگیا ہے لوگ چاولوں اور تندور کی روٹی پر گزارہ کرنے لگے ہیں جبکہ غریب اور نچلے طبقے کے لوگوں کا کوئی پرسان حال نہیں ہے انہوں نے وزیراعلیٰ گلگت بلتستان ، وزیر خوراک ،ڈائریکٹر فوڈ اور سول سپلائی آفیسر سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر آٹا بحران کا خاتمہ کیا جائے تاکہ شہریوں کو آسانی سے آٹا میسر آسکے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s