چلاس: متاثرین دیامر بھاشہ ڈیم و مالکان تھک نیاٹ نے اپنے جائز حقوق کے حصول کیلئے شاہراہ قراقرم پر پرامن احتجاجی دھرنادیا|PASSUTIMESاُردُو

4b6cfd6a-75a4-47ac-bdc9-04e79557dd90چلاس: ہفتہ، 19 دسمبر، 2015ء – پھسو ٹائمز اُردُو (عمرفاروق فاروقی) متاثرین دیامر بھاشہ ڈیم و مالکان تھک نیاٹ نے اپنے جائز حقوق کے حصول کیلئے شاہراہ قراقرم پر پرامن احتجاجی دھرنادیا ۔احتجاجی دھرنے میں تھک نیاٹ یوتھ قومی مومنٹ کے سینکڑوں کارکنوں سیمت ہزاروں لوگوں نے شرکت کیا۔احتجاجی مظاہرین نے چلاس زیروپوئنٹ پر کئی گھنٹوں تک احتجاج کا سلسلہ جاری رکھا۔احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے تھک نیاٹ یوتھ قومی مومنٹ کے صدر ضیاء اللہ تھکوی،جعفر جمالی،،غلام غفور،ضیاء الحق،عالم دستگیر،نمبردار زبیر،نمبردار براق،نمبردار مقابل شاہ،نمبردار حریق،عاشق اللہ،وزیر خان ،جیل خان،مبارک،طوطا، حاجی عبدالمالک،محمد طاہر،سخی محمد جیلاامان،مجید،سعیدو دیگر نے کہا کہ حکومت کے ساتھ تھک کے عوام لڑنا نہیں چاہتے ہیں،حکومت بھی تھک نیاٹ کے عوام کے حقوق کا خیال رکھیں اور ان کے ساتھ انصاف کے بنیادوں پر کام لیں ،انہوں نے کہا کہ ڈیم میں سب سے زیادہ متاثر تھک نیاٹ کے عوام ہورہے ہیں ،اس لیئے حکومت سب سے پہلے تھک نیاٹ کے حدود کا تعین کرے ۔ کچھ سازشی عناصر مالکان تھک نیاٹ کو سیکورٹی اداروں کے ساتھ لڑانا چاہتے ہیں ،لیکن ان کی کوشیشیں ناکام ہوگئی۔ہم پاک فوج کو سلام پیش کرتے ہیں ، اور ڈی سی دیامر سے پراُمید ہیں کہ وہ ہمارے مسائل حل کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ 2010کے معاہدے میں تھک نیاٹ کے عوام کو شامل کیا جاتا تو آج یہ نوبت نہ آتی ۔احتجاجی مظاہرہ کئی گھنٹوں تک جاری رہنے کے بعد دیامر کی ضلعی انتظامیہ کا مظاہرین سے کامیاب مذکرات ہوئے۔مذکرات میں تھک نیاٹ کے عوام نے حکومت کو ایک ہفتے کا ڈیڈ لائن دیا اور کہا کہ حکومت ایک ہفتے کے اندر اندر متاثرین تھک نیاٹ کے ساتھ تھک نیاٹ کے حدود بارے ٹیبل ٹاک کرے،نہ کرنے کی صورت میں تھک نیاٹ کے عوام اپنے آئندہ کا لحہ عمل طے کرنے پر مجبور ہونگے۔مظاہرین سے مذکرات کرتے ہوئے ایڈیشنل ڈی سی دلدار ملک،اے سی طارق اور ایس پی دیامر دانشور خان نے یقین دہانی کرائی کہ ایک ہفتے کے اندر اندر تھک نیاٹ کے مالکان کے ساتھ حکومت کا ٹیبل ٹاک کرائیں گے،اور ایک ہفتے کے دورانیہ میں چلاس جچن تا التشعی تک تمام متنازعہ ایریا میں کسی قسم کی لینڈ ایکوزیشن نہیں کیا جائیگا۔جس کے بعد مظاہرین منتشر ہوگئے۔پر امن دھرنے کے دوران روڈ ہر قسم کی ٹریفک کیلئے کھلا رہا،اور کسی قسم کی ناخوشگوار واقعات پیش نہیں آئے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s