اسلام آباد: اینٹی ٹیکس مہم کے سرپرستی کون کر رہاتھا اہم راز سامنے آگیا۔ |PASSUTIMESاُردُو

12540603_858495814248055_6927228417199560351_nاسلام آباد: جمعرات، 14 جنوری، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو ( نما ئندہ خصوصی ) گٹر پھٹ گیا اینٹی ٹیکس مو منٹ کے سر پر ستی بھی سامنے آگئی ۔زرائع سے معلوم ہو ا ہے کہ اینٹی ٹیکس مو منٹ کی تحر یک چلا نے والا پا کستان مسلم لیگ (ن) کا دیر نہ رہنما ہے ۔ کنٹر یکٹرزایسو ایشن کے صدر فردوس کا عر صہ دراز سے (ن) لیگ کے ساتھ وابسطگی ہے اور جب گلگت بلتستان کی صوبا ئی حکومت کے پا س وفاق کے سا منے احتجاج کر نے کا کو ئی بھی بہانہ نہیں رہا تو اس نے اینٹی ٹیکس مو ومنٹ کی تحریک چلانے کا اپنے افراد کو اشارہ کر دیا تا کہ (ن) لیگ کی حکومت وفاق میں اس کو مو ضو ع بنا کر ٹیکسزز پہ بات کر سکے ۔ تمام قسم کے ٹیکسزز تو پہلے سے لیئے جا رہے تھے اب ود ہو لڈنگ ٹیکس کا نو ٹیفیکشن ہوا تو زیا دہ تر متا ثر وہ لو گ ہو رہے تھے جنہوں نے (ن) لیگ کو سپور ٹ کیا تھا اور زیا دہ تر ٹھیکیدا ر (ن) لیگ کے ہیں با قی پی پی پی کے ہیں جس پر اس احتجاج کی حما یت پی پی پی نے بھی کر دیا ۔(ن) لیگ کے وفا دا روں نے جب یہ معا ملہ (ن)لیگ کی صو بو ئی حکومت کے سامنے رکھا تو انہوں نے وفاقی سطح پر اپنی مجبوری دکھا ئی جو کام نہ آسکی اور پھر یہ ٹیکس کے خلاف ایشو منظر عام پر لا یا گیا تا کہ وفاق میں بات کی جا سکے ۔ حالا نکہ اس سے قبل بھی عوامی ایکشن کمیٹی نے دھر نے دیئے ٹیکسزز کے خلاف احتجاج کیا جس میں تمام مکا تب فکر کے لوگ تھے اس وقت (ن) لیگ اور پی پی پی نے مخالفت کی کیو نکہ اس وقت پی پی پی کی گلگت بلتستان میں حکومت تھی اور (ن) لیگ کے وفاق میں حکو مت تھی ۔ اپنے کمیشن کے لیئے اس وقت سا تھ نہیں دیا گیا لیکن اب کی بار حکومت نے بھی اشارہ کیا جس پہ پی پی پی بھی استعمال ہو ئی ۔ یہ اچھا اقدام ہے لیکن یہ اقدام صر ف اپنے مطلو بہ اہداف تک ہیں جن کاان کو بتا یا گیا ہے ۔ اسی وجہ سے ابتک اتنے سا رے مسا ئل ہیں جن کو پس پشت ڈال کر اچا نک اس تحر یک کا سامنے آنا اور ون پو ا ئینٹ ایجنڈا رکھنا ،بجلی کی لو ڈ شیڈنگ،گندم کو ٹے میں کٹو تی، منرلز کے نقل و حمل کی پابندی بھی سا منے آئے ہیں جو کہ پو رے گلگت بلتستان کے عوام کا اجتما عی مسئلہ ہے ۔ اب ان نکات بھی بھی عمل نہیں ہوا تو گلگت بلتستان میں مزید حا لات ابتر ہو نگے ۔ عوامی سروے میں ان تمام نکات پہ بھی سب کو یکجا ہو نے کا کہا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ یہ ہڑتال صر ف ایک ایجنڈے پر ہے اور یہ ایجنڈا کمیشن لینے والے ٹھیکیدا روں کے لیئے ہے ۔ بلکہ ان تمام ٹھیکیدا روں کے کو ئف اکھٹے کیئے جا ئیں اور ان کے کاموں کی جا نچ پر تال کی جا ئے انہوں نے جہاں بھی جو بھی کام کرایا ہے وہ غیر معیا ری کام ہے ۔ ٹیکس غیر قانو نی تو ہے لیکن اس کو (ن) لیگ یا پی پی پی کے اپنے ٹھیکدا روں کے لیئے استعمال سے عوام میں آئیندہ کے لیئے اعتماد اٹھ جا ئے گا ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s