غذر: اینٹی ٹیکس موومنٹ کے زیر اہتمام گاہکوچ میں ٹیکس کے نفاذ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، غذر چترال روڑ کو بند کرکے مظاہرین نے ٹیکس کے نفاذ کو فوری واپس لینے کا مطالبہ کردیا |PASSUTIMESاُردُو

hghhh.jpgغذر: منگل، 09 فروری، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو (پ ر) اینٹی ٹیکس موومنٹ کے زیر اہتمام گاہکوچ میں ٹیکس کے نفاذ کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ، غذر چترال روڑ کو بند کرکے مظاہرین نے ٹیکس کے نفاذ کو فوری واپس لینے کا مطالبہ کردیا ۔احتجاجی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے اینٹی ٹیکس کے عہدیداروں فردوس احمد،غیور احمد ، انیس الرحمن ،قاری عبدا لخالق،نعمت شاہ ، موسیٰ مدد،عمران عل اور دیگر نے کہا کہ وفاقی حکومت یا صوبائی حکومت گلگت بلتستان کی پسماندہ قوم پر جبری ٹیکس نہیں لگاسکتی قو م اس قدر غریب اور پسماندہ ہوچکی ہے کہ ایک پائی کا ٹیکس دینے کی جسارت نہیں رکھتی جبکہ ٹیکس لگانے کے لیے کسی بھی علاقے کی آئنی حیثیت کا تعین ہونا بھی لازمی ہے جب حقوق کی بات کرتے ہیں تو ہمیں کہا جاتا ہے کہ آپ کا پاکستان سے کوئی تعلق نہیں بلکہ خطہ متنازعہ ہے ہم سوال کرتے ہیں کہ متنازعہ خطے کے اندر وفاق پاکستان کس قانون اور آئین کے تحت ٹیکس لگاتی ہے ؟انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کی قوم مختلف تعصبات کا شکار ہوکر مختلف گروہوں میں بٹ چکی ہے یہی وجہ ہے کہ قومی حقوق کی بات کرنے کے لیے کوئی تیار نہیں جب تک ہم ایک ہوکر اپنے حقوق کا تحفظ نہیں کریں گے کوئی بھی طاقت ہمیں ہمارے جائز حقوق نہیں دے سکتی مقررین نے مزید کہا کہ سی پیک ہمارے سینوں سے گزر کر گوادر پہنچ جاتا ہے مگر منصوبے میں ہمارا ذکر ہی نہیں یہ کیسے ہوسکتا ہے کہ گواردر کو ہم لنک کریں اور ترقیاتی پراجیکٹ میں ہماری مفادات شامل نہ ہوں؟وفاق اور دیگر طاقتوں کو باؤر کراتے ہیں کہ جب تک ملک کے دیگر تمام اضلاع سے گلگت بلتستان کو دوگنا فائد ہ نہیں دیاجاتا پراجیکٹ ہماری لاشوں پر گزر کر بنے گا مزید ظلم اور ذیادتیاں برداشت کرنے کا وقت گزر چکا ہے گزشتہ 68سالوں کے دوران ہمارے حقوق اس قدر غصب کئے گئے ہیں کہ اب زخموں کو چھپانا ممکن نہیں احتجاج کا سلسلہ اب ٹیکس کے فیصلے کو واپس لینے کے بعد ہی ہی رک جائے گا اس سے پہلے گلگت بلتستان بھر میں احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا ہم کسی مصلحت میں پڑے بغیر اپنے مشن کو جاری رکھیں گے گلگت بلتستان کی قوم ہمارے ساتھ کھڑی ہے عوامی نمائندوں اور صوبائی حکومت کو بھی اپنے فرائض کو واعدے کے مطابق ادا کرنے ہوں گے اسمبلی میں پہنچ کر عوامی حقو ق کے تحفظ کے بجائے اپنے مفادات کی سوچنے والے نمائندوں کو خدا کا خوف کرنا ہوگا دریں اثناء احتجاج جلسے میں انجمن تاجران، ٹھیکدار برادری کے علاوہ مختلف سیاسی و قوم پرست جماعتوں کے رہنماؤں اور کارکنوں نے کثیر تعداد میں شرکت کیا او ر اینٹی ٹیکس موومنٹ کی کال پر غیر معینہ مدت تک احتجاجی دھرنوں کا اعلان اعلان کیا ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s