گلگت: اسمبلی اجلاس:عوام اپنے مسائل کے حل کیلئے بے چین ہیں اور ہم نے اپنی اے ڈی پی کی سیکمیں پی اینڈ ڈی ڈیپارٹمنٹ میں جمع کروائے ہیں آخر ان سیکموں پر ٹینڈر کب تک ممکن ہے ایوان کو جواب دیا جائے، نوازخان ناجی|PASSUTIMESاُردُو

12036385_966125536764660_3727388127224802214_nگلگت : منگل، 23 فروری، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو (نعیم انور) واقفہ سوالات کے دوران رکن اسمبلی نواز خان ناجی نے کہا کہ عوام اپنے مسائل کا حل چاہتے ہیں ،عوام کو روڈ،پل ،حفاظتی بند،واٹر سپلائی سیکم وغیرہ کا فکر رہتا ہے اور عوام ہم سے اے ڈی پی کے ٹینڈر کے حوالے سے پوچھتے رہتے ہیں اور عوام اپنے مسائل کے حل کیلئے بے چین ہیں اور ہم نے اپنی اے ڈی پی کی سیکمیں پی اینڈ ڈی ڈیپارٹمنٹ میں جمع کروائے ہیں آخر ان سیکموں پر ٹینڈر کب تک ممکن ہے ایوان کو جواب دیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ کام انتہائی سست روی کا شکار ہے اگر حکومت نے عوامی مسائل کے حل میں کو تاہی کا مظاہرہ کیا تو مسلم لیگ کی حشر بھی پیپلز پارٹی والی ہو گی۔ جس پر وزیر تعمیرات نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ بعض ممبران اسمبلی نے ابھی تک اپنا اے ڈی پی،پی اینڈ ڈی ڈیپارٹمنٹ میں جمع نہیں کرایا ہے جس کے باعث باقی ممبران کے سیکموں پر بھی کام نہیں ہو سکا ہے ،ممبران اسمبلی اپنا اے ڈی پی فوری طور پر جمع کروائے تاکہ منصوبوں پر کام تیز ہو سکے ۔جس پر سپیکر نے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ عوامی مسائل کے حل میں ممبران اسمبلی سنجیدگی کا مظاہرہ کرے اور اپنی سیکمیں جلد از جلد تیار کر کے متعلقہ محکمہ تک پہنچائے تاکہ حتمی منظوری کے بعد سیکموں کا ٹینڈر ہو کے کام شروع ہو سکے۔اسلامی تحریک کے ممبر اسمبلی کیپٹن شفیع نے کہا کہ ایوان کا چھٹا اجلاس ہے ہم ہر بار سوالات پو چھتے ہیں مگر کام نہیں ہو رہے ہیں اور نہ ہی وزراء کی طرف سے جواب آتا ہے ،انہوں نے کہا کہ حلقہ ۳ میں اساتذہ اور ہیلتھ ڈیپارٹمنٹ کے ملازمین صرف تنخواہیں لینے آتے ہیں مگر ڈیوٹیاں کہیں اور دے رہے ہیں حکومت سرکاری ملازمین پر نظر رکھے اور حلقہ ۳ کے ملازمین کو واپس بھیجا جائے ۔انہوں نے کہا ایوان میں مسائل حل نہیں ہوتے ہیں یہاں آنا اپنا اور قوم کا وقت ضائع کرنے والی بات ہے۔اپوزیشن لیڈر حاجی شاہ بیگ نے کہا کہ اداروں میں میرٹ کا قتل عام ہے محکمہ پولیس کے علاوہ تمام بھرتیاں غیر شفاف ہوئے ہیں ۔سرکاری اداروں میں امیدواروں سے ٹیسٹ انٹرویو لیکر رزلٹ میں تاخیر کا مطلب کرپشن کرنا ہے لہذا محکمہ پولیس کی طرح ٹیسٹ کے ا گلے روز رزلٹ اعلان کیا جائے تاکہ امیدوار مطعین ہو سکے ۔رزلٹ میں تاخیر کے باعث شکوک و شہبات جنم لیتی ہیں لہذا جن اداروں میں ٹیسٹ انٹرویوز ہوئے ہیں فوری طور پر رزلٹ اعلان کیا جائے تاکہ بے روز گاری کم ہو سکے ۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s