چلاس: اٹالین کوہ پیماء سائمن مورو نانگاپربت سرکرنے کے بعد واپسی پر چلاس پہنچنے پر میڈیا سے گفتگو|PASSUTIMESاُردُو

17 a1719چلاس: منگل، یکم مارچ، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو  (عمر فاروق فاروقی) گلگت بلتستان کے ضلع سکردو سے تعلق رکھنے والے کوہ پیما محمد علی سد پارہ نے سرمائی موسم میں پاکستان کی دوسری بڑی عظیم چوٹی نانگا پربت (کلرماونٹین)کو26فروری2016میں سر کرکے ملک پاکستان اور گلگت بلتستان کا نام روشن کر دیا۔ جبکہ اٹلین کوہ پیما سائمن مورو بھی موسم سرما میں نانگا پربت سر کرنے میں کامیاب ہوئے ۔محمد علی سد پارہ نے سرمائی موسم میں کلر ماونٹین (نانگا پربت ) سر کرنے والے پہلے گلگت بلتستان کے کوہ پیما ہونے کا اعزاز حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ موسم سرما میں نانگا پربت پر فتح کے جھنڈے گاڑ کرایک نیا ریکارڈ قائم کر لیا۔ محمد علی سد پارہ کے ٹو پاکستان گروپ کی توسط سے ایک سپین خاتون کے ہمراہ25دسمبر 2015کو مشن کا آغاز کیا تھا ،اور 2ماہ تک مسلسل جدوجہدکرنے کے بعد بالاآخروہ اپنے اس مشن میں کامیاب ہوگئے۔یاد رہے 1988سے لیکر اب تک کسی بھی کوہ پیما نے سردیوں میں نانگا پربت سر نہیں کیا۔

دوسری طرف 23دسمبر 2015کو اٹالین انٹرنیشنل ونٹر ایکسپیڈیشن ایڈونچرٹور پاکستان کی توسط سے اٹلی کے کوہ پیما سائمن مورو نے نانگا پربت سر کرنے کیلئے مشن کا آغاز کیا۔اور مسلسل جدوجہد کے بعد 26فروری2016کو ۳ بجے نانگا پربت کی چوٹی پر اپنے فتح کا پرچم گاڑ دیا ۔جبکہ ان کے ساتھ خاتون کوہ پیما تمارا لنگرنانگا پربت سر کرنے میں کامیاب نہ ہوسکی۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s