چلاس: پولیس معصوم طلبہ پر بغیر کسی تحقیق کے انسداد دہشت گردی کے دفعات لگا کر داریل کے طلبہ کو دہشت گرد بنا رہی ہے ،جو کہ ظلم کی انتہا ہے |PASSUTIMESاُردُو

93e7f5fa-96b5-4a8e-9b4d-20b5e41e8a60.jpgچلاس: جمعہ، 11 مارچ، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو ( عمر فاروق فاروقی) 8سالہ زوہب اللہ کے خلاف انسداد دہشت گردی کے ایکٹ لگانے والے آفسران کے خلاف پھوگچ سکول کے طلبہ اور داریل کے عوام نے سخت احتجاجی مظاہرہ کیا ۔مظاہرین نے داریل پھوگچ کے مقام پر ٹائر جلا کر روڈ کو ہر قسم کی ٹریفک کیلئے بند کر دیا اور پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کیا۔احتجاجی مظاہرے میں سینکڑوں طلبہ اور ہزاروں لوگوں نے شرکت کیا۔احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے پھوگچ سکول داریل کے طلبہ نے کہا کہ چوتھی کلاس کے طالب علم پر دہشت گردی کا ایکٹ لگانا انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے ،دیامر پولیس معصوم طلبہ پر بغیر کسی تحقیق کے انسداد دہشت گردی کے دفعات لگا کر داریل کے طلبہ کو دہشت گرد بنا رہی ہے ،جو کہ ظلم کی انتہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ڈی ایس پی راجی رحمت اور ایس ایچ او یاسین کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لاکر انھیں سزا دیا جائے اور معصوم زوہب کو انصاف فراہم کیا جائے۔انہوں نے کہا کہ غیر تربیت یافتہ پولیس کی من مانیوں سے دیامر میں جرائم مزید بڑھ رہے ہیں ۔انہوں نے وزیر اعظم پاکستان ،فورس کمانڈر گلگت بلتستان ،وزیر اعلی اور آئی جی پی سے مطالبہ کیا ہے کہ ۸ سالہ زوہب پر دہشت گردی کے دفعات لگانے والے پولیس افسروں کو معطل کیا جائے اور طالب علم زوہب اللہ پر ۸جون 2015کو فائرنگ کرکے زخمی کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف انسداد دہشت گردی کا مقدمہ درج کرکے کارروائی عمل میں لائی جائے۔انہوں نے کہا کہ جب تک ننھے زوہب کو انصاف نہیں ملتا داریل کے تمام طلبہ سکولوں کا بایکاٹ کریں گے ۔ا

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s