چلاس: داریل سمیگال کے مقام پر مقامی جرگہ نے انتظامیہ اور حکومت کے ساتھ مل کر حفاظتی ٹاورز کو رضاکارانہ طور پر گرانا شروع کر دیا ہے|PASSUTIMESاُردُو

2121

تصویر اشتیاق داریلی سے

چلاس: جمعہ، 25 مارچ، 2016ء – پھسو ٹائمز اُردُو (عمرفاروق فاروقی) داریل سمیگال کے مقام پر مقامی جرگہ نے انتظامیہ اور حکومت کے ساتھ مل کر حفاظتی ٹاورز کو رضاکارانہ طور پر گرانا شروع کر دیا ہے ۔بدھ کے روز9ٹاورز کو گرا دیا گیا ہے ،جبکہ دیگر کو کل سے گرا دیا جائیگا ۔ذرائع نے کے پی این کو بتایا کہ ضلعی انتظامیہ اور حکومت نے ٹاورز گرانے کیلئے3دن کا الٹی میٹم دیا تھا ،مگر الٹی میٹم سے پہلے داریل کے علما اور عمائدین نے مقامی سطح پر جرگہ تشکیل دے کر حکومت کے ساتھ تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے ٹاورز کو رضاکارانہ طور پر گرانے پر رضامند ہوگئے۔ذرائع کے مطابق داریل کے عمائدین اور علماء نے شاہ روم،حاجی زمان،حاجی قیوم،مولانا سید رحمت،مولانا جہانگیر،اور مولانا روشن پر مشتمل جرگہ تشکیل دے دیا گیا ہے۔مذکورہ مقامی جرگہ سیکورٹی اداروں اور ضلعی انتظامیہ کی جانب سے نشاندہی کرائے گئے ٹاورز کو گرانے میں رضاکارانہ طور پر حکومت کا ساتھ دے گا۔ذرائع کے مطابق ٹاورز گرانے کے حوالے سے ابتدائی طور پر داریل کے گاوں سمیگال کا انتخاب کیا گیاہے ،جہاں پر 40سے زائد ٹاورز گرانے کی نشاندہی ہو چکی ہے ۔ذرائع کے مطابق بدھ کے روز 9ٹاورز گرائے جا چکے ہیں ،جبکہ باقی ماند ہ ٹاورز اگلے روز گرائے جائیں گے۔ادھر ڈپٹی کمشنر دیامر عثمان احمد نے کے پی این سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے نشاندہی کرکے ٹاورز گرانے کے حوالے سے 3دن کا الٹی میٹم دیا تھا،اور 3روز تک رضاکارانہ طور پر ٹاور ز نہیں گرائے جائے تو حکومت طاقت سے گراتی۔انہوں نے کہا کہ خوش آئند بات یہ ہے کہ داریل کے عمائدین اور علما نے مقامی جرگہ کرکے رضاکارانہ طور پر ٹاورز گرانے پر رضا مند ہوچکے ہیں ،اور حکومت کے ساتھ تعاون کیا ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s